چین نے لداخ میں مزید 3اہم مقامات پر قبضہ کر لیا، 2بھارتی فوجی ہلاک،پاکستان نے ایل او سی پر ایک اور انڈین جاسوس ڈرون مار گرایا

Published On: 2020-06-29 07:34:20, By: Asif

بیجنگ، نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک، )لداخ میں بھارت کو مسلسل پریشانیوں کا سامنا ہے، چین نے ایل اے سی پر مزید تین سٹریٹجک پوزیشنز پر کنٹرول حاصل کرلیا جس میں دولت بیگ اولڈی، گلوان ویلی کے اہم حصے شامل ہیں، بھارتی فوج پینگانگ میں فنگرٹو تک محدود ہو کر رہ گئی۔چینی فوج نے علاقے میں مشقیں بھی شروع کر دیں، لداخ میں مزید دو بھارتی فوجی مارے گئے، بین الاقوامی میڈیا کے مطابق چین نے15 جون سے پہلے علاقے میں اپنے فوجیوں کی ٹریننگ کے لیے مارشل آرٹ کے 20 ٹرینرز بھیجے تھے۔1996 میں ہونے والے معاہدے کے مطابق دونوں ممالک علاقے میں بندوق اور آتشی مواد نہیں رکھ سکتے۔ دوسری جانب بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے ہمالیائی سرحد پر چینکے ساتھ کشیدگی کے بارے میں کہا کہ لداخ میں بھارت کی سرزمین پر آنکھ اٹھا کر دیکھنے والوں کو سخت جواب دیا جائے گا۔ہندوستان ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق انہوں نے کہا کہ ’لداخ میں بھارتی حدود پر نظر رکھنے والوں کو کرارا جواب دے دیا گیا ہے‘۔ان کا کہنا تھا کہ ’اگر بھارت دوستی نبھانا جانتا ہے تو وہ آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر دیکھنا اور مناسب جواب دینا بھی جانتا ہے‘۔تاہم بھارتی وزیر اعظم نے اپنے بیان میں چین کا نام نہیں لیا۔ان کا کہنا تھا کہ ’ہمارے بہادر فوجیوں نے یہ دکھا دیا کہ وہ کبھی بھی بھارت کی شان پر آنچ نہیں آنے دیں گے، بھارت ہلاک ہونے والے بہادروں کو سلام پیش کرتا ہے، انہوں نے ہمیشہ بھارت کو محفوظ رکھا اور ان کی قربانی کو یاد رکھا جائے گا‘۔واضح رہے کہ بھارت اور چین کے فوجیوں کے مابین 15 جون کو ہونے والے تصادم میں 20 بھارتی فوجی ہلاک ہوگئے تھے۔امریکا کی خلائی ٹیکنالوجی کمپنی میکسار ٹیکنالوجیز کی جانب سے جاری کردہ تصاویر میں دکھایا گیا تھا کہ وادی گلوان کے ساتھ چینی تنصیبات نظر آرہی ہیں۔آسٹریلیا کے اسٹریٹجک پالیسی انسٹی ٹیوٹ کے مصنوعی سیارہ ڈیٹا کے ماہر نیتھن روسر نے کہا تھا کہ اس تعمیر سے پتا چلتا ہے کہ کشیدگی میں کمی کا کوئی امکان نہیں ہے۔ماہرین کے مطابق دونوں ملکوں کے درمیان براہ راست جنگ کے امکانات انتہائی کم ہیں البتہ کشیدگی میں کمی میں کچھ وقت لگ سکتا ہے۔

Re-Designed & Developed By: City Software House Chitral [0345-5742494]