ہلاکتوں میں اضافہ، سمارٹ لاک ڈاؤن سخت کرنے پر غور، نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر سے سفارشات طلب، کورونا سے مزید76افراد جان کی بازی ہار گئے

Published On: 2020-06-04 01:39:51, By: Asif

اسلام آباد (، مانیٹرنگ ڈیسک،) کورونا کیسز میں اضافے پر وفاقی حکومت نے سمارٹ لاک ڈاؤن سخت کرنے پر غور شروع کر دیاوزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ہونیوالے اعلیٰ سطح کے اجلاس میں ملک میں کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز کی و جو ہا ت کا تفصیلی جائزہ لیاگیا اور وفاقی حکومت نے کیسز میں تیزی کیساتھ اضافے کے تناظرمیں سمارٹ لاک ڈاؤن میں سختی پر غور شروع کرتے ہوئے اس حوالے سے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر سے سفارشات بھی مانگ لیں۔اجلاس میں متعلقہ وزراء کے علاوہ کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کے چیئرمین وفاقی وزیر اسد عمر نے بھی شرکت کی۔ پہلے مر حلے میں عوام سے ایک مرتبہ پھر کورونا سے بچاؤ کیلئے ضابطہ اخلاق پر عمل کرنے کی اپیل کی جائیگی اور اگر یہ اپیل کامیاب نہ ہوئی تو دوسرے مرحلے میں ایس او پیز پر عملدرآمد کیلئے سختی بھی کی جائیگی۔ چاروں صوبے اور آزاد کشمیر گلگت بلتستان کی سیاسی قیادت بھی عوام سے ایس او پیز پر عملدرآمد کیلئے درخواست کریگی اور اس سلسلے میں میڈیا پر خصوصی پیغامات نشر اور ٹیلی کاسٹ کئے جائینگے،ملکی سیاسی قیادت کے ذریعے ہی عوام کو ایس او پیز پر عملدرآمد کیلئے رضا مند کیا جائیگا تاکہ جہاں جہاں خلاف ورزی ہورہی ہے وہاں اقدامات اٹھا ئے جائیں۔ اجلاس میں یہ بھی فیصلہ کیاگیا کہ اگر ایس او پیز پر عملدرآمد نہ ہوا تو لاک ڈاؤن سخت کردیا جائیگا اور جن شعبوں کو کھولا گیا ہے ان کی دوبارہ بندش ہوگی۔اجلاس کو بتایا گیا کہ عوام کی جانب سے حفاظتی تدابیر اختیار نہیں کی جارہی جس کی وجہ سے کیسز کی تعداد دوگنی اور اموات کی شرح مسلسل بڑھ رہی ہے،لاک ڈاؤن کو سخت کرکے کورونا وائرس کو روکا جاسکتا ہے۔دریں اثناسندھ میں پبلک ٹرانسپورٹ پر پابندی ختم ہونے کے بعد کراچی میں پبلک ٹرانسپورٹ بحال ہو گئی لیکن ٹرانسپورٹرز کی جانب سے ایس او پیز پر عملدرآمد مکمل طور پر نہیں ہو رہا۔سند۔ٹرانسپورٹرز کی جانب سے ماسک پہننے کی ہدایت پرعمل کا ملا جلارجحان دیکھنے کو مل رہا ہے جب کہ مسافر بھی بغیر ماسک سفر کرتے نظر آ رہے ہیں۔

Re-Designed & Developed By: City Software House Chitral [0345-5742494]