مساجد،بازاروں اور دوران سفر ماسک لازمی،پنجاب حکومت کا لاک ڈاؤن میں مزید نرمی،منہ اور ناک ڈھانپنے کی پابندی پر عملدرآمد یقینی بنانے کا فیصلہ

Published On: 2020-05-31 03:36:27, By: Asif

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹرظفر مرزا نے کہا ہے کہ مساجد، بازاروں اور دیگر پرہجوم مقامات پر ماسک پہننا لازم قرار دیا ہے، جیسے کیسز اور اموات بڑھ رہی ہیں تو احتیاطی تدابیر پر سختی سے عمل کر نے کی ضرورت ہے،آنیوالے دنوں میں ہمارے کیسز اور بدقسمتی سے اموات بھی بڑھیں گی، لوگوں سے اپیل ہے قوم اور لوگوں کو صحیح معلومات پہنچائیں، صحیح رہنمائی کریں اور درست معلومات فراہم کریں،پاکستان کے نئے نظام ریسورس منیجمنٹ سسٹم سے جلد تفصیل سے آگاہ کریں گے اور پاکستان میں بستروں، آئی سی یو اور وینٹی لیٹرز اور دیگر سہولیات کی کیفیت پر بریفنگ دیں گے۔ ہفتہ کو ڈاکٹر ظفر مرزا نے اسلام آباد میں معاون خصوصی معید یوسف کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے ظفر مرزا نے کہا جیسے کیسز اور اموات بڑھ رہی ہیں تو جو احتیاطی تدابیر دی گئی ہیں ان پر سختی سے عمل کرنے کی ضرورت ہے اور خاص کرماسک کے استعمال کو لازمی قرار دے رہے ہیں۔انہوں نے کہاک آپ دفتر یا باہر کہیں بھی ہوں اور سمجھتے ہوں کہ سماجی فاصلہ رکھنا ہے تو وہاں ماسک پہننا لازمی ہے، پرہجوم جگہوں پر ماسک پہننا ہم نے لازمی قرار دیا ہے۔معاون خصوصی نے کہا کہ مساجد، بازاروں، شاپنگ مالز، ذرائع آٓمد رفت چاہے جہاز، ریل، بس یا ویگن ہو یہاں ماسک پہننا لازم ہے۔ ہم اب تک 5 لاکھ 32 ہزار کے قریب ٹیسٹ کرچکے ہیں اور مصدقہ کیسز کی شرح 12.4 فیصد ہے۔ہم نے پچھلے 24 گھنٹوں میں 12 ہزار20 ٹیسٹ کیے جسکے نتیجے میں 2 ہزار 429 ٹیسٹ مثبت آئے اور اگر صرف پچھلے 24 گھنٹوں کا جائزہ لیں تو اس کی شرح تقریباً20.4 فیصد بنتی ہے۔جب سے کورونا آیا ہے مثبت ٹیسٹ کی تعداد بتدریج بڑھتی گئی اور اب یہ 20 فیصد سے زائد تک پہنچ چکی ہے، پاکستان میں 36 فیصد لوگ صحت یاب ہوئے۔ ان اموات کی نشاندہی ہم کافی عرصے سے کررہے تھے کیونکہ جس طرح پاکستان میں وبا پھیل رہی ہے اورمقامی سطح پرمنتقلی کے کیسز کی تعداد92 فیصد ہے۔یہ امکان تھا ہے اور ابھی مستقبل میں کچھ عرصے رہنے کا امکان بھی ہے کہ ہمارے کیسز اور بدقسمتی سے اموات بھی بڑھیں گی۔ وی کیئر پروگرام کے تحت ڈاکٹر ہماری اولین ترجیح ہیں جو قوم کی خدمت کررہے ہیں، اس حوالے سے کئی اقدامات بھی کررہے ہیں۔ سوشل میڈیا میں بعض اوقات بڑے ذمہ دار افراد بھی غلط معلومات دیتے ہیں یا ان کا مقصد یاسمت صحیح نہیں ہوتی۔ تمام افراد سے درخوست کرتا ہوں کہ وہ قوم اور لوگوں کو صحیح معلومات پہنچائیں، صحیح رہنمائی کریں اور درست معلومات فراہم کریں۔ یقیناکہیں کوتاہی ہوسکتی ہے لیکن اس کا یہ مطلب نہیں وہاں پر ہنگامہ آرائی کی جائے اورلوگوں کو نشانہ بنایا جائے، اس سے مجموعی صورتحال خراب ہوگی۔ میڈیا اور دیگر جگہوں میں کہا جاتا ہے کہ پاکستان میں صحت کا نظام بیٹھ گیا ہے لیکن اس حوالے سے پاکستان کے نئے نظام ریسورس منیجمنٹ سسٹم سے جلد تفصیل سے آگاہ کریں گے

Re-Designed & Developed By: City Software House Chitral [0345-5742494]