چین کا لداخ کے متنازعہ علاقے پر قبضہ، بھارتی فوج کی چھترول، 250اہلکار گرفتار، مودی سرکار کی درخواست پر رہا

Published On: 2020-05-27 08:19:16, By: Asif

بیجنگ، نئی دہلی (مانیٹرنگ ڈیسک،ن) نہتے کشمیریوں پر ظلم ڈھانے والی بھارتی فوج کی چینی فوج کے ہاتھوں بری طرح پٹائی کے بعد بھارت کاخطے میں چودھراہٹ کا خواب چکنا چور ہو گیا علاقے کا جغرافیہ بدلنے کی کوشش پر چین نے منہ توڑ جواب دیتے ہوئے لداخ میں متنازعہ علاقے کاکنٹرول حاصل کر لیا، چین نے سکم بارڈر پر بھی مزید فوج تعینات کردی، اطلاعات کے مطابق چین اور بھارت کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ چین نے لداخ اور سکم کی سرحد پر مزید 5 ہزار فوجی بھیج دیے ہیں۔۔ چینی فوج سرحد پر زمین دوز بنکر بھی بنا رہی ہے۔ وادی گالوان کے اطراف میں چینی فوج کے 8 سو خیمے دیکھے گئے ہیں۔چین کا کہنا ہے بھارت نے وادی گالوان کے قریب دفاع سے متعلق غیر قانونی تعمیرات کی کوشش کیتو چینی فوج نے بھارتی فوج کے250فوجیوں ایک دستے کو گرفتار کر لیا جسے بھاتی حکومت کی درخواست پر بعد میں رہا کر دیا گیا۔ بھارتی آرمی چیف نے اس واقعے کو بھارت کیلئے شدید جھٹکا قرار دیا ہے۔چین کا کہنا کہا ہے کہ بھارت نے سکم اور لداخ میں لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کی۔ بھارت نے متنازع علاقہ کا سٹیٹس یکطرفہ طور پر تبدیل کرنے کی کوشش کی جس پر چین نے بھرپور کارروائی کرتے ہوئے لداخ کے متنازعہ علاقے پر قبضہ کر لیا۔بھارتی میڈیا نے ایسی تصاویر جاری کیں ہیں جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ جہاں پہلے ہندوستانی فوج موجود تھی، وہاں اب چینی فوج موجود ہے۔ دوسری طرف بھارتی فورسز سکم اور لداخ میں رسوائی اور شرمندگی سے دوچار ہونے کے بعد، پاکستان کے خلاف پراپیگنڈہ شروع کر دیا ہے۔بھارتی میڈیا پر پاکستان کے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے بیان کو توڑ مروڑ کر پیش کیا جانے لگا۔ بھارتی عوام کو گمراہ کرنے اور ان سے حقائق چھپانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ بھارتی پٹائی

Re-Designed & Developed By: City Software House Chitral [0345-5742494]